اردو زبان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا مستند جریدہ

گوگل کی نئی ایپلی کیشن ڈیٹالی پاکستان میں بھی جاری

2,561

گوگل نے ترقی پذیر ممالک میں مقیم اپنے صارفین کو انٹرنیٹ کا بہتر تجربہ دینے کے لیے نئی ایپلی کیشن جاری کردی ہے، جس کا نام ڈیٹالی (Datally) ہے۔

یہ ایک ڈیٹا سیونگ ایپلی کیشن ہے جس کی مدد سے صارفین جان پائیں گے کہ وہ روزمرہ زندگی میں کتنا ڈیٹا استعمال کر رہے ہیں اور کون سی ایسی ایپلی کیشنز ہیں جو ان کے ڈیٹا بنڈل کے چپکے چپکے کھاتی رہتی ہیں اور انہیں بلاک بھی کر سکتے ہیں۔

پاکستان اور بھارت جیسے ترقی پذیر ممالک میں ڈیٹا بنڈلز کافی مہنگے ہیں اور صارفین کو سخت فکر لاحق ہوتی ہے کہ کہیں ایک ہی ہلّے میں پورے ڈیٹا پلان کا ستیاناس نہ ہو جائے۔ اس لیے صارفین کو چوکنّا بھی رہنا پڑتا ہے اور وقت لگا کر بارہا اپنے اسمارٹ فونز کا ڈیٹا بند بھی کرنا پڑتا ہے۔

بلاشبہ اس وقت ایسی چند ایپلی کیشنز موجود ہیں جو صارفین کو ڈیٹا کے حوالے سے کچھ کنٹرول دیتی ہیں لیکن اس صورتحال میں اگر کوئی ادارہ حقیقی مدد کر سکتا ہے تو وہ گوگل ہے۔

وجہ سادہ سی ہے، اینڈرائیڈ گوگل کا بنایا گیا آپریٹنگ سسٹم ہے، اس لیے گوگل کی جانب سے باضابطہ طور پر ایسی ایپلی کیشن کے آنے کی تُک بھی بنتی ہے جو یہ پتہ لگائے کہ فون میں موجود کون سی ایپ کتنا ڈیٹا کھاتی ہے اور صارف کس طرح چند مخصوص ایپس کو بند کرکے اپنا ڈیٹا بچا سکتے ہیں۔

ڈیٹالی گوگل کے Next Billion Users منصوبے کا حصہ ہے۔ اس منصوبے کی توجہ ایسے حلوں پر ہے جو ترقی پذیر ممالک میں زیادہ سے زیادہ عوام کے لیے انٹرنیٹ کو قابل رسائی بنا رہے ہیں۔ ایسے ممالک جہاں بنیادی لاگت تو زیادہ ہے لیکن ٹیکنالوجی کی صلاحیت اور گنجائش بھی بہت زیادہ ہے۔

اسی منصوبے کے تحت گوگل اپنی اگلی ایپلی کیشن FilesGo بھی جاری کرے گا جو صارفین کو فائلوں کا کنٹرول دے گی۔ یہ بہت عمدہ ایپلی کیشن ہے جو صارفین کو اپنی ڈیوائس کو صاف ستھرا رکھنے، فائلوں کو منظم کرنے اور اپنے دوستوں کے ساتھ باآسانی شیئر کرنے کا موقع دے گی۔

تبصرے
لوڈنگ۔۔۔۔
error: اس ویب سائٹ پر شائع شدہ تمام مواد کے قانونی حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں