اردو زبان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا مستند جریدہ

ایڈورڈ سنوڈین نے آپ کی حفاظت کے لیے جاندار ایپ بنا لی

2,195

رواں سال کے اوائل میں نیشنل سکیورٹی ایجنسی (این ایس اے) کا بھانڈا پھوڑنے والے مشہور ایجنٹ ایڈورڈ سنوڈیشن نے جیکولین موڈینا سے ملاقات کی، جو چاڈ کی مشہور خاتون وکیل اور انسانی حقوق کی ترجمانی کرنے والی معروف شخصیت ہیں اور آجکل سابق آمر حسین حبرے کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کے لیے جدوجہد کر رہی ہیں۔ حبرے کو 2016ء سے سینی گال کی ایک عدالت میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کےالزامات کا سامنا ہے کہ انہوں نے 40 ہزار افراد کے قتل، جنسی غلامی میں لینے اور ریپ کرنے کا حکم دیا تھا۔ ملاقات میں سنوڈین نے موڈینا کو بتایا کہ وہ ایک ایسی ایپ پر کام کر رہے ہیں جو موبائل ڈیوائس کو ایک طرح کے موشن سینسر میں تبدیل کر سکتی ہے تاکہ جب آپ کی ڈیوائسز کے ساتھ کوئی چھیڑ چھاڑ کرے تو آپ کو معلوم ہو جائے۔ یہ ایپ بتا سکتی ہے کہ آپ کے کمرے میں کوئی بغیر اجازت داخل تو نہیں ہوا، اگر کسی نے آپ کی کسی چیز کو حرکت دی ہے، یا پھر کوئي آدھی رات کو آپ کے دوست کے گھر میں تو داخل ہوا ہے تو فوراً مطلع کرتی ہے۔ سنوڈین کا کہنا تھا کہ وہ بہت سنجیدہ ہوگئی تھیں اور کہا تھا کہ مجھے یہ چاہیے۔ ہمارے اردگرد بہت سے لوگ ہیں جن کو اس کی ضرورت ہے۔

آج اعلان کیا گیا ہے کہ ہیون (Haven) وہ ایپ ہے جو یہ کام کر سکتی ہے۔ ایک سستی سی اینڈرائیڈ ڈیوائس پر ہیون کو انسٹال کیا جائے تو یہ آپ کے لیپ ٹاپ سے چھیڑ چھاڑ ہونے کی صورت میں آپ کے زیر استعمال فون پر نوٹیفکیشن بھیج سکتا ہے۔ اگر آپ اپنا لیپ ٹاپ گھر پر یا دفتر میں یا ہوٹل کے کمرے میں چھوڑ جائیں تو آپ ہیون کے حامل فون کو لیپ ٹاپ کو اوپر رکھ سکتے ہیں، جیسے ہی ہیون کو حرکت، روشنی یا کوئي چلت پھرت محسوس ہوگی، بالخصوص جب لگے گا کہ کوئی آپ کے سامان کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کر رہا ہے تو یہ واقعے کو نوٹ کر لیتی ہے۔ یہ ایپ تصویر لے سکتی ہے، آواز ریکارڈ کر سکتی ہے اور آپ کے زیر استعمال فون پر نوٹیفکیشن بھیج سکتی ہے۔ اس میں سے کوئی بھی نوٹ کلاؤڈ پر نہیں رکھا جاتا بلکہ یہ آپ کے ہیون ایپ رکھنے والے فون اور زیر استعمال فون کے درمیان اینڈ-ٹو-اینڈ انکرپٹڈ ہوگی۔

سنوڈین 2013ء سے کوئی موبائل ڈیوائس استعمال نہیں کر رہے، لیکن گزشتہ چند سالوں سے ان کا وقت اسمارٹ فونز کے ساتھ چھیڑ چھاڑ پر گزر رہا ہے۔ 2016ء میں انہوں نے ہارڈویئر ہیکر اینڈریو بنی ہوانگ کے ساتھ کام کیا اور ایسا فون کیس بنایا جو آئی فون کے آؤٹ پٹ کو مانیٹر کرتا ہے اور جب بھی آپ کی ڈیوائس انٹینا کے ذریعے سگنل بھیجتی ہے تو آپ کو مطلع کرتا ہے۔

سنوڈین ٹیکنالوجی کے استعمال کے حوالے سے ہمیشہ محتاط رہتے ہیں۔ ایک دستاویزی فلم میں دکھایا گیا ہے کہ وہ کس طرح کے حفاظتی اقدامات کرتے ہیں۔ انہوں نے تو صحافیوں کو یہ تک کہا ہوا ہے کہ وہ اپنے فون کو ہوٹل کے فریج میں رکھیں تاکہ مائیکروفون یا کیمروں کے ذریعے کسی بھی خفیہ ریکارڈنگ اور اس کی ترسیل سے بچ سکیں۔

سنوڈین کو امید ہے کہ ہیون، جو ایک اوپن سورس پروجیکٹ ہے اور کوئی بھی اس کا جائزہ لے سکتا ہے، اس میں حصہ لے سکتا ہے یا اپنے مقاصد کے مطابق بنا سکتا ہے، تمام اقسام کے خطرات کا مقابلہ کرے گا۔

اینڈرائیڈ کے لیے ہیون ایپ ڈاؤنلوڈ کریں

تبصرے
لوڈنگ۔۔۔۔
error: اس ویب سائٹ پر شائع شدہ تمام مواد کے قانونی حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں