اردو زبان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا مستند جریدہ

بوئنگ کا ڈرون، جو 500 پونڈز وزن اٹھائے

329

ہوا بازی کی دنیا کے معروف ادارے بوئنگ نے آج ایسے ڈرون کی رونمائی کی ہے جو 500 پونڈز یعنی 226 کلو زیادہ وزن اٹھانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس پروٹو ٹائپ کو eVTOL کہا جا رہا ہے یعنی electric vertical-takeoff-and-landing کارگو ایئر وہیکل (CAV)۔

ایروسپیس کے عظیم ادارے کے مطابق یہ ڈرون مستقبل میں خودکار پرواز کا منظرنامہ تبدیل کردے گا۔ اس ہیوی ڈیوٹی ڈرون کو بوئنگ کے انجینیئرز نے تین ماہ میں ڈیزائن اور تیار کیا ہے اس نے امریکی ریاست مسوری میں واقع بوئنگ کی ریسرچ لیب میں ابتدائی پرواز کے تجربات کامیابی سے مکمل کیے ہیں۔

بوئنگ چیف ٹیکنالوجی آفیسر گریگ ہائسلوپ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ کارگو ڈرون بوئنگ کی eVTOL حکمت عملی کی تکمیل میں ایک اور بڑا قدم ہے۔ ہمارے پاس فضائی سفر اور نقل و حمل کو واقعتاً تبدیل کرنے کا موقع ہے اور ہم اس سفر میں آج کے دن کو ایک بڑے قدم کے طور پر دیکھتے ہیں۔

الیکٹرک پروپلژن سسٹم سے لیس سی اے وی پروٹوٹائپ آٹھ روٹرز کا حامل ہے جو اسے عمودی پرواز کی سہولت دیتے ہیں۔ اس کی لمبائی 15 فٹ، چوڑائی18 فٹ اور اونچائی 4 فٹ ہے اور وژن 747 پونڈز یعنی 339 کلو ہے۔ بوئنگ نے اس کی پرواز کے بارے میں مزید تفصیل جاری نہیں کی جیسا کہ جانچ کے دوران یہ کتنی دیر تک اڑا؟ یا پھر اس کی بیٹریوں کی گنجائش کتنی ہے؟ وغیرہ۔

اس نئے ڈرون کی آمد بوئنگ کے اُس اعلان کے صرف چار ماہ بعد ہوئی ہے جس میں ادارے نے ارورا فلائٹ سائنسز کو خرید لیا تھا۔ ارورا ہوا بازی پر تحقیق کا ادارہ ہے جو اوبر کے ساتھ مل کر "اڑن ٹیکسی” کے منصوبے پر کام کررہا ہے۔ بوئنگ کا کہنا ہے کہ اس کا پروٹوٹائپ فضائی ٹیکسی کے کام کو مکمل کرے گا۔

محض ڈرون اور اڑنے والی ٹیکسیاں ہی بوئنگ کے منصوبے کا حصہ نہیں ۔ ادارہ ایک کارآمد جیٹ پیک بنانے کے لیے 2 ملین ڈالرز کے انعامی مقابلے کا بھی بنیادی اسپانسر ہے۔ مقابلے میں ایک محفوظ، خاموش اور حجم میں چھوٹا جیٹ پیک بنانے کا ہدف دیا جائے گا جو ایک آدمی کو ایک ہی ری فیول یا ری چارج میں 20 میل یا اس سے زیادہ آگے تک لے جائے۔

تبصرے
لوڈنگ۔۔۔۔
error: اس ویب سائٹ پر شائع شدہ تمام مواد کے قانونی حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں