اردو زبان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا مستند جریدہ

بچوں کے لیے فیس بک کا الگ میسنجر آ گیا

467

فیس بک “میسنجر کڈز” کے نام سے ایسی چیٹ ایپ پر کام کر رہا ہے جو فیس بک پر موجود کم عمر بچوں کو محفوظ بنانے میں والدین کی مدد کرے گی۔

ایک ایسے زمانے میں جب زیادہ سے زیادہ والدین اپنے بچوں کو فون یا ٹیبلٹ استعمال کرنے کی اجازت دے رہے ہیں، فیس بک کا کہنا ہے کہ وہ چاہتا ہے کہ وہ والدین کے اکاؤنٹ کے ذریعے بچوں کے لیے ایک محفوظ حل تخلیق کرے۔ امریکا میں ‘میسنجر کڈز ایپ’ ایپ اسٹور پر ایک علیحدہ ایپ کی صورت میں دستیاب ہے۔

والدین کی جانب سے بچے کا اکاؤنٹ بنائے جانے کے بعد، وہ انہی رابطوں کے ساتھ وڈیو چیٹ کر سکیں گے جنہیں والدین منظور کریں گے۔ اس کے علاوہ بچوں کے لیے دستیاب متحرک تصاویر اور فلٹرز کی لائبریری بھی محدود ہوگی۔ اس میسنجر پر ہوم اسکرین پر ظاہر ہوگا کہ بچوں کو کس کے ساتھ بات کرنے کی اجازت ہے۔ فیس بک کا کہنا ہےکہ اس ایپ کو بنانے میں تحقیق کرنے والوں کے ساتھ ساتھ والدین بھی شامل رہے۔

میسنجر کڈز پر اشتہارات نہیں ہوں گے اور نہ ہی فیس بک بچے کی معلومات کو کہیں بھی اشتہارات کے لیے استعمال کرے گا۔

جاری کردہ بیان میں فیس بک کا کہنا ہے کہ یہ ایپ دادا دادی اور نانا نانی کے ساتھ وڈیو چیٹ کرنے، دور رہنے والے کزنز کے ساتھ رابطے میں رہنے اور والدہ کو خوبصورت تصویر بھیجنے کے کام آئے گی۔ میسنجر کڈز اہل خانہ کے لیے آن لائن رابطے کی نئی دنیا کھول رہا ہے ۔

فیس بک اپنے پلیٹ فارم پر نسل نو کو محفوظ بنانے کے لیے کام کر رہا ہے ۔ فیس بک کے مطابق چھ سال کی عمر تک کے بچے بھی میسنجر کڈز کو استعمال کر سکتے ہیں۔ جب یہ بچے 13 سال کی عمر کو پہنچیں گے تو بڑوں والے اکاؤنٹ پر منتقل ہو سکتے ہیں۔

میسنجر کڈز ایپ انسٹال کریں

تبصرے
لوڈنگ۔۔۔۔
error: اس ویب سائٹ پر شائع شدہ تمام مواد کے قانونی حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں