اردو زبان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا مستند جریدہ

خودکار قاتل روبوٹس پر مجوزہ پابندی نامنظور! روس کا اعلان

317

روس نے ان حلقوں کو پیغام پہنچا دیا ہے جو قاتل روبوٹس پر پابندی لگانے کا سوچ رہے ہیں کہ روس ایسے روبوٹس بنائے گا، چاہے کچھ بھی ہو جائے۔ یہی گزشتہ ماہ جنیوا میں مصنوعی ذہانت سے چلنے والے ہتھیاروں اور گاڑیوں کے معاملے پر ایک ہفتہ جاری رہنے والے مذاکرات کا نچوڑ ہے۔

معروف دفاعی تجزیہ کار ادارے ڈیفنس ون کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق روسی حکومت نے 10 نومبر کو جاری کردہ بیان میں اقوام متحدہ کی جانب سے “خودکار ہتھیاروں کے قاتلانہ نظام” (Lethal Autonomous Weapon Systems) یا LAWS پر پابندی کے خلاف سخت رویّہ اختیار کیا تھا، جس کا انکشاف اب ہوا ہے۔

روسی حکومت کے مطابق ہتھیاروں کے ایسے نظام کے کارآمد نمونوں کی کمی LAWS پر مذاکرات کا بدستور بنیادی مسئلہ ہے۔

“بلاشبہ مستقبل کے ممکنہ ہتھیاروں پر احتیاطاً پابندی لگانے کے بین الاقوامی معاہدوں کی پہلے مثالیں موجود ہیں۔ البتہ LAWS پر احتیاطی پابندی یا اس کے خلاف سخت اقدامات اٹھانے کی یہ کوئی دلیل نہیں، یہ کہیں زیادہ پیچیدہ اور وسیع اقسام کے ہتھیار ہوں گے جن کے بارے میں انسان کی موجودہ سوجھ بوجھ محض اندازہ ہے۔”

روس نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ اس سے مصنوعی ذہانت کی سول صلاحیتوں کو بھی نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے۔

روس کا سخت رویہ اس وقت سامنے آیا ہے جب اس کے دیگر معاہدوں پر پورا اترنے کے حوالے سے بھی سوالات اٹھ رہے ہیں۔ روس کو پہلے ہی 1987ء کے انٹرمیڈیٹ نیوکلیئر فورسز ٹریٹی کی خلاف ورزی کے الزام کا سامنا ہے، جس کی وجہ سے امریکا نئے زمین سے مار کرنے والے کروز میزائل پر تجربات شروع کر چکا ہے۔

تبصرے
لوڈنگ۔۔۔۔
error: اس ویب سائٹ پر شائع شدہ تمام مواد کے قانونی حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں